Recently Finished
Live Cricket
Upcoming Matches
View All Matches

دورہ جنوبی افریقہ سے واپسی پر قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈکوچ مکی آرتھر نے قذافی اسٹیڈیم میں پریس کانفرنس کی۔ مکی آرتھر نے کہا کہ جنوبی افریقہ میں بیٹنگ کرنا آسان نہیں، سیریز کی غلطیوں سے سبق سیکھا ہے، بابر اعظم اور امام الحق دورے کا سب سے مثبت پہلو ہیں۔ ہیڈکوچ نے کہا کہ سرفراز کی اصل ذمہ داری وکٹ کیپنگ اور کپتانی ہے جس میں وہ اچھا پرفارم کر رہے ہیں، ان کی بیٹنگ پر بھی کام ہو رہا ہے کیونکہ ہم جانتے ہیں وہ جب بھی بڑی اننگز کھیلتے ہیں پاکستان کیلئے فتح ممکن ہو جاتی ہے۔
اپنے غصے کے حوالے سے مکی آرتھر نے کہا کہ ڈریسنگ روم میں بعض اوقات غصے پر قابو نہیں رکھ پاتا مگر اس کا مقصد بھی کھلاڑیوں کی بہتری ہے۔ محمد عامر کا دفاع کرتے ہوئے ہیڈکوچ کا کہنا تھا کہ محمد عامر کا ریکارڈ نہ دیکھا جائے ہمیں جب بھی دباؤ کی صورت میں ان کی ضرورت پڑی انھوں نے پرفارم کیا اور ہم انھیں ورلڈکپ سے پہلے نہیں چھوڑ سکتے۔
مکی آرتھر نے کہا کہ پاکستان کے ڈومیسٹک اسٹرکچر کو مضبوط کرنے اور کھلاڑیوں کا بیک اپ تیار کرنے کی ضرورت ہے۔ ورلڈکپ پر بات کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ ورلڈکپ میں پاکستان کی بولنگ لائن اصل ہتھیار ہو گی، بیٹنگ میں حفیظ اور شعیب ملک سے بہت امیدیں وابستہ ہیں اور اگر وہ پرفارم کریں گے تو ٹیم پر سے دباؤ کم ہو جائے گا۔