Recently Finished
Live Cricket
Upcoming Matches
No live scores available
View All Matches

غیرملکی کھلاڑی جہاں پی ایس ایل فور کیلئے تیار ہیں وہیں وہ پاکستان کی میزبانی کے بھی دیوانے نظر آتے ہیں۔ پی ایس ایل انتظامیہ کی جانب سے جاری اپنے بیان میں روی بوپارہ نے کہا کہ لاہور میں جس طرح ہمیں خوش آمدید کہا گیا وہ کبھی نہیں بھلایا جا سکتا، پاکستان میں ہر بچے اور بوڑھے میں کرکٹ کا جوش پایا جاتا ہے۔ انھوں نے کہا کہ مجھے یاد ہے پشاور زلمی کے خلاف میچ سے پہلے بارش ہوئی تو گراؤنڈ کو خشک کرنے کیلئے ہیلی کاپٹر کا بھی استعمال کیا گیا جس سے اندازہ ہوتا ہے کہ کرکٹ ان کیلئے کیا معنی رکھتی ہے۔
لیام ڈوسن کا پی ایس ایل کے بارے میں کہنا تھا کہ پاکستان میں 3 میچ کھیلنا میرے لیے ایک بہت خوشگوار تجربہ تھا اور پاکستانی شائقین کا جوش وخروش قابلِ دید تھا جو چاہتے ہیں کہ بین الاقوامی کرکٹ ان کے ملک میں لوٹ آئے۔ انھوں نے کہا کہ مجھے یاد ہے کہ لاہور میں پلے آف میچ کھیلنے کے بعد میرے پاس دبئی واپس جانے کا آپشن موجود تھا لیکن میں کراچی کے فائنل میں شریک ہوا اور جب میں وہاں گیا تو انتظامات دیکھ کر مجھے تحفظ کا احساس ہوا، مجھے خوشی ہے کہ میں نے یہ موقع نہیں گنوایا۔