Recently Finished
Live Cricket
Upcoming Matches
View All Matches

ون ڈے کرکٹ کی تاریخ میں ایسا دوسری مرتبہ ہوا کہ کسی ٹیم کے مڈل آرڈر بلےبازوں یعنی تین سے پانچ نمبر تک بیٹنگ کرنے والے بیٹسمینوں نے ایک سیریز میں تین سے زائد سنچریاں اسکور کی ہوں۔ دونوں میں یہ کارنامہ انجام دینے کا اعزاز پاکستانی بیٹسمینوں کو ہی حاصل ہے۔ آسٹریلیا کے خلاف پانچ ون ڈے میچوں کی سیریز میں قومی ٹیم کے مڈل آرڈر بلےبازوں نے پانچ سنچریاں اسکور کیں۔
بدقسمتی سے ایک بھی سنچری پاکستان کے کام نہ آئی اور قومی ٹیم کو پانچوں میچوں میں شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ پہلے میچ میں حارث سہیل نے ون ڈے کرکٹ میں اپنی پہلی سنچری اسکور کرتے ہوئے 101 رنز کی اننگز کھیلی جبکہ دوسرے میچ میں محمد رضوان بھی اپنے کیریئر کی پہلی سنچری بنانے میں کامیاب ہوئے۔
چوتھے میچ میں عابد علی نے اپنے ون ڈے ڈیبیو پر سنچری بنانے کا اعزاز حاصل کیا اور محمد رضوان نے سیریز میں اپنی دوسری سنچری اسکور کی۔ آخری میچ میں حارث سہیل کا بلا ایک بار پھر چلا اور انھوں نے 130 رنز اسکور کیے۔