Recently Finished
Live Cricket
Upcoming Matches
No live scores available
View All Matches

شعیب اختر نے ویسے تو اپنے کیریئر میں پاکستان کو متعدد کامیابیاں دلائیں مگر 1999 کا کولکتہ ٹیسٹ ان کے کیرئیر میں خاص اہمیت رکھتا ہے۔ ایشین ٹیسٹ چیمپئن شپ میں پاکستان اور بھارت مدمقابل تھے۔ پاکستان ٹیم پہلی اننگز میں صرف 185 رنز بنا سکی تھی۔ بھارت کی مضبوط بیٹنگ لائن سے بڑے اسکور کی امید تھی لیکن شعیب اختر کی خطرناک بولنگ نے پاکستان کو شکست سے بچا لیا۔
پہلی اننگز میں بھارتی ٹیم 223 رنز بنا کر آؤٹ ہوئی۔ شعیب اختر نے مسلسل دو گیندوں پر راہول ڈریوڈ اور سچن ٹنڈولکر کو آؤٹ کیا اور مجموعی طور پر 4 وکٹیں لیں۔ دوسری اننگز میں بھارت ہدف کا تعاقب کر رہا تھا تو راولپنڈی ایکسپریس نے ایک مرتبہ پھر چار وکٹیں لیں اور پاکستان کو 46 رنز سے کامیابی دلا دی۔
ایک ٹویٹر صارف نے جب ان سے کیرئیر کے یادگار میچ کے بارے میں پوچھا تو شعیب اختر نے کولکتہ ٹیسٹ کا نام لیا۔ میچ وننگ پرفارمنس کے باوجود شعیب اختر اس میچ میں مین آف دی میچ کا ایوارڈ نہیں جیت سکے تھے۔ یہ اعزاز مشترکہ طور پر سعید انور اور جواگل سریناتھ نے اپنے نام کیا تھا۔