Recently Finished
Live Cricket
Upcoming Matches
View All Matches

ورلڈکپ 1992 کی فاتح ٹیم کے رکن رمیز راجہ نے ورلڈکپ کے بعد قومی ٹیم میں بڑی تبدیلیوں کا مطالبہ کر دیا۔ رمیز راجہ نے کہا کہ ورلڈکپ اسکواڈ میں دو 38 سال کے کھلاڑی موجود ہیں جبکہ اس ٹیم میں کو نوجوان کھلاڑیوں کی ضرورت ہے۔ انھوں نے کہا کہ ورلڈکپ میں قومی ٹیم کی ناکامیوں نے ٹیم کو پوری طرح ایکسپوز کر دیا ہے، اگر ابھی بھی ٹیم میں تبدیلیاں نہیں کی گئیں تو پاکستان کرکٹ مزید زوال کا شکار ہو جائے گی۔
سابق کرکٹر نے بابر اعظم اور فخر زمان کی کارکردگی پر بھی سوال اٹھا دیا اور کہا کہ بابر اعظم کے ٹیلنٹ کا کیا فائدہ اگر وہ پاکستانی ٹیم کو فتح کی جانب نہ لے جا سکے؟ فخر زمان کی اوپننگ کا کیا فائدہ اگر وہ روہت شرما کی طرح بیٹنگ ہی نہ کر سکیں؟ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان واضح فرق ہی یہ تھا کہ جب حریف ٹیم کے بیٹسمین سیٹ ہوئے تو انھوں نے بڑا سکور کیا۔