Recently Finished
Live Cricket
Upcoming Matches
No live scores available
View All Matches

ذوالقرنین حیدر نومبر 2010 میں پاکستان اور ساؤتھ افریقہ کے مابین دبئی میں ہونے والی ایک روزہ میچوں کی سیریز کے دوران اچانک ٹیم کا ساتھ چھوڑ کر لندن چلے گئے تھے۔ لندن پہنچنے کے بعد ذوالقرنین کا کہنا تھا کہ میچ فکسرز کی جانب سے انھیں اور ان کے اہلخانہ کو قتل کی دھمکیاں دی جا رہی تھیں جس وجہ سے انھیں قومی ٹیم کا ساتھ چھوڑ کر لندن آنا پڑا۔
بعدازاں ذوالقرنین حیدر نے برطانیہ میں سیاسی پناہ کی درخواست بھی دائر کر دی تھی جس میں انھوں نے موقف اختیار کیا تھا کہ پاکستان میں ان کی جان کو خطرہ ہے لہذا وہ وطن واپس نہیں جا سکتے تاہم اس وقت کے وزیرداخلہ رحمان ملک کی جانب سے سیکیورٹی فراہم کرنے کی یقین دہانی کے بعد ذوالقرنین اپریل میں پاکستان لوٹ آئے تھے۔
پی سی بی نے ذوالقرنین حیدر پر پانچ لاکھ روپے کا جرمانہ عائد کر کے انھیں کرکٹ کھیلنے کی اجازت دے دی تھی تاہم ذوالقرنین حیدر ایکشن میں نظر نہیں آئے۔ اب ذرائع سے خبر سامنے آئی ہے کہ ذوالفقرنین حیدر جلد کرکٹ میں واپسی کا اعلان کر سکتے ہیں۔ امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ وہ جمعہ کو پریس کانفرنس میں یہ اعلان کریں گے۔