Recently Finished
Live Cricket
Upcoming Matches
No live scores available
View All Matches

پاکستان اور سری لنکا کے درمیان دوسرا ٹیسٹ میچ کراچی میں شیڈول ہے۔ راولپنڈی میں کھیلا گیا پہلا ٹیسٹ میچ بارش کی نذر ہو گیا اور قومی کھلاڑیوں کو ہوم کراؤڈ کے سامنے کھل کر کھیلنے کا موقع نہیں مل سکا تھا۔ قومی کرکٹرز تاریخی نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں دس سال بعد ٹیسٹ میچ کھیلنے کے لیے بیتاب ہیں۔
اس حوالے سے ٹیسٹ ٹیم کے کپتان اظہر علی نے کہا کہ نیشنل اسٹیڈیم کراچی کا شمار دنیائے کرکٹ کے بہترین گراونڈز میں ہوتا ہے جبکہ قومی ٹیسٹ ٹیم کا نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں ریکارڈ بھی شاندار ہے۔ شان مسعود نے ماضی کی یادیں تازہ کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور ساؤتھ افریقہ کے درمیان ورلڈکپ 1996 کا میچ نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں دیکھا۔
اسد شفیق بھی کراچی ٹیسٹ کے حوالے سے پرجوش دکھائی دے رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ نیشنل اسٹیڈیم کراچی کے انکلوژرز میں بیٹھ کر میچ دیکھنا آج بھی یاد ہے، اسٹیڈیم میں اس قدر شور مچاتا تھا کہ گھر واپسی پر گلہ خراب ہوتا تھا۔
ٹیسٹ کرکٹ کی دس سال بعد واپسی کے ساتھ ہی دس سال بعد قومی ٹیم میں واپس آنے والے فواد عالم کا کہنا ہے کہ ملک میں انٹرنیشنل میچز کا انعقاد نوجوان نسل کو کرکٹ سے جوڑے رکھنے میں معاون ثابت ہو گا۔
محمد رضوان نے کراچی ٹیسٹ کے حوالے سے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ چند سال سے کراچی کنگز کی نمائندگی کر رہا ہوں، نیشنل اسٹیڈیم کراچی ہی اپنا ہوم گراؤنڈ لگتا ہے۔