Recently Finished
Live Cricket
Upcoming Matches
No live scores available
View All Matches

25 مارچ 1992 کا دن پاکستان کے لیے بڑی اہمیت کا حامل ہے کیونکہ اس دن پاکستان کرکٹ ٹیم نے ورلڈکپ اپنے نام کیا تھا۔ پاکستان کو ورلڈکپ جیتے ہوئے 28 سال کا لمبا عرصہ گزر گیا مگر اس وقت ٹیم میں موجود کھلاڑیوں کو یہ کل کی بات لگتی ہے۔ کرکٹ کے لیجنڈ وسیم اکرم اور رمیز راجہ نے اس تاریخی دن کے حوالے سے یادیں تازہ کیں۔
رمیز راجہ کا کہنا تھا کہ اس وقت جیت کی اتنی خوشی نہیں تھی کہ ہم نے کیا حاصل کر لیا مگر جیسے جیسے وقت گزرا اور لوگوں نے باتیں شروع کیں پھر ہمیں احساس ہوا کہ ہم نے کیا کارنامہ انجام دیا تھا۔
سابق کرکٹر نے بتایا کہ ورلڈکپ جیتنے کی خوشی آج تک ہے اور یہ عالمی کپ جیتنے کی سب سے اہم بات یہ تھی کہ امریکہ سمیت پوری دنیا میں پاکستان کا نام اسپورٹس کی بڑی شہ سرخی بنا جس سے پاکستان کا نام روشن ہوا۔
دوسری جانب سوئنگ کے سلطان وسیم اکرم نے کہا کہ اس وقت ہمارا جیت کا جذبہ بہت بلند تھا اور اس جیت کی خوشی پوری پاکستانی قوم کو ہوئی۔ وسیم اکرم کا کہنا تھا کہ اس فتح سے دنیا کے نقشے پر پاکستان کا نام مثبت طرح سے ابھرا اور آج بھی لوگ جب ہم سے ملتے ہیں تو 1992 کے ورلڈکپ فائنل کا ذکر ضرور کرتے ہیں۔