Recently Finished
Live Cricket
Upcoming Matches
No live scores available
View All Matches

پاکستان کے لیے 05-2004 کا دورہ بھارت قومی کرکٹ ٹیم کے لیے انتہائی یادگار ثابت ہوا تھا۔ اس دورے پر پاکستان اور بھارت کے درمیان کھیلے جانے والی تینوں میچوں کی ٹیسٹ سیریز 1-1 سے ڈرا ہوئی تھی جبکہ ون ڈے سیریز میں شاہینوں نے بھارتی سورماؤں کا 2-4 سے شکست دی تھی۔
موہالی میں کھیلے جانے والا پہلا ٹیسٹ میچ بغیر کسی نتیجے کے ختم ہوا تھا جبکہ بھارت نے کولکتہ میں ہونے والے میچ میں کامیابی سمیٹ کر سیریز میں 0-1 کی برتری حاصل کر لی تھی۔ دونوں ٹیموں کے درمیان آخری ٹیسٹ بنگلور میں کھیلا گیا تھا جس میں پاکستان نے فتح اپنے نام کر کے سیریز 1-1 سے ڈرا کر دی تھی۔
انضمام الحق نے یادگار بنگلور ٹیسٹ کی کہانی سناتے ہوئے بتایا کہ چوتھے روز کے اختتامی لمحات میں یہ سوچ کر اننگز ڈکلیئر کی تھی کہ بھارت کے اہم وکٹیں حاصل کر لیں گے لیکن ان اوورز میں میزبان ٹیم نے اچھے کھیل کا مظاہرہ کیا اور کھیل کے اختتام پر باب وولمر نے مجھے بولا کہ ڈکلیئر کرنے کا فیصلہ غلط تھا۔
سابق کپتان نے بتایا کہ اگلے روز کھیل کا آغاز ہوا تو میں نے اپنی ٹیم کو کہا کہ اگر ہم سہواگ کو آؤٹ کر لیں تو وہ ہدف حاصل کرنے میں کامیاب نہیں ہو پائیں گے اور جب سہواگ رن آؤٹ ہوا تو بھارت دفاعی کرکٹ کھیلنے لگا، میں نے اٹیکنگ فیلڈنگ رکھی اور ہم میچ جیتنے میں کامیاب ہو گئے۔