Recently Finished
Live Cricket
Upcoming Matches
View All Matches

پاکستان کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں پر بورڈ اور کوچز کی جانب سے فٹنس کا معیار پورا کرنے کے لیے کافی دباؤ ہے۔ کھلاڑیوں کے فٹنس ٹیسٹ باقاعدگی سے لیے جا رہے ہیں مگر شاہد آفریدی نے بار بار فٹنس ٹیسٹ لینے کی مخالفت کر دی ہے۔
شاہد آفریدی نے کہا کہ ہر 15 سے 20 دن بعد کھلاڑیوں کے فٹنس ٹیسٹ لیے جا رہے ہیں، پی سی بی نے فٹنس ٹیسٹ کو نا جانے کیا سمجھ لیا ہے، بار بار فٹنس ٹیسٹ لینے سے کھلاڑیوں میں انجری مسائل جنم لے رہے ہیں۔
بوم بوم نے کہا کھلاڑیوں نے انھیں خود بتایا کہ وہ اس وجہ سے انجری کا شکار ہو رہے ہیں، 4 سے 5 بڑے کرکٹرز اس وقت بھی گھٹنے کی تکلیف میں مبتلا ہیں اور وجہ بھی یہی ہے۔
شاہد آفریدی نے مزید کہا کچھ کھلاڑیوں نے یہ بھی بتایا کہ انھیں کہا جاتا ہے پرفارمنس نہ دکھانے پر ٹیم سے باہر کر دیا جائے گا، یہ روش بھی ٹھیک نہیں ہے۔ سابق کپتان نے وزیراعظم عمران خان کی مکمل حمایت کا اعلان بھی کیا۔