Recently Finished
Live Cricket
Upcoming Matches
No live scores available
View All Matches

پاکستان ٹیم کے سابق کپتان سلیم ملک نے دعویٗ کیا ہے کہ انھوں نے ماضی میں کوئی فکسنگ نہیں کی، معافی مانگنے کا مطلب یہ نہیں کہ میں نے فکسنگ کی تھی۔ ویڈیو لنک کے ذریعے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے سلیم ملک نے کہا کہ پی سی بی کے مطابق میں نے ماضی میں دیے گئے ٹرانسکرپٹ کے جواب نہیں دیئے جبکہ مجھے آج تک کوئی ٹرانسکرپٹ دیئے ہی نہیں گئے، اگر کوئی ٹرانسکرپٹ یا لیٹر تھا تو عدالت میں کیوں پیش نہیں کیا گیا؟
انہوں نے کہا کہ عدالت نے مجھے کلیئر کیا ہے، اگر پی سی بی کچھ پوچھتا تو لازمی اس کا جواب بھی دیتا، میں ٹی وی پر خبریں دیکھ کر حیران ہوا کہ میں نے فکسنگ کا جرم مان لیا ہے۔ سابق بیٹسمین نے کہا کہ میں 19 سال سے انصاف کے لیے لڑ رہا ہوں، ایک مرتبہ جسٹس قیوم کی رپورٹ ضرور پڑھ لیں۔
ان کا کہنا تھا کہ لوگ رپورٹ پڑھے بغیر مجھ پر الزام لگاتے ہیں، جسٹس قیوم رپورٹ میں لکھا ہے کہ کس کس کو ٹیم میں نہیں ہونا چاہیے، مجھ پر لمبی پابندی لگا دی، باقی پلیئرز کو جرمانے لگا کر چھوڑ دیا گیا۔
انہوں نے مزید کہا ایسا لگتا ہے کہ جیسے میں پاکستانی نہیں ہوں، میں کسی نوکری کے چکر میں نہیں ہوں، اگر انصاف نہ ملا تو عمران خان کے پاس بھی جاؤں گا۔