Recently Finished
Live Cricket
Upcoming Matches
View All Matches

پاکستان ٹیم کے سابق اور سری لنکا کے موجودہ ہیڈکوچ مکی آرتھر نے کرک ان جف کو خصوصی انٹرویو دیا ہے۔ اس انٹرویو میں مکی آرتھر نے پاکستان ٹیم کے ساتھ کام کرنے کے تجربے، چیمپئنز ٹرافی 2017 کی کامیابی اور بابر اعظم کی بطور کھلاڑی ڈویلپمنٹ سمیت کئی امور پر گفتگو کی۔
مکی آرتھر کا کہنا تھا کہ پاکستان میرے دل کے بہت قریب ہے، وہاں میرے تین سال بہت اچھے گزرے، میری کئی لوگوں سے ملاقات ہوئی، میں آج بھی پاکستان کے کچھ لوگوں سے رابطے میں ہوں اور وہ تین سال میری زندگی کے بہت خاص تھے۔
سابق کوچ نے کہا کہ جب میں آیا تو بہت چیزیں ٹھیک کرنے والی تھیں، فٹنس اور فیلڈنگ پر زیادہ توجہ نہیں دی جا رہی تھی۔ انہوں نے کہا کہ ٹیسٹ رینکنگ میں پہلی پوزیشن کا کریڈٹ نہیں لے سکتا کیونکہ میں نے ذمہ داری اس وقت سنبھالی جب پاکستان اس پوزیشن کو حاصل کرنے کے قریب تھا۔
مکی آرتھر نے پاکستان کی نمبرون ٹیسٹ رینکنگ کا سہرا اس وقت کے کپتان مصباح الحق اور کوچ وقار یونس کے سر پر سجایا۔ انہوں نے کہا کہ ویسٹ انڈیز میں ٹیسٹ سیریز جیتنا بہت یادگار لمحہ تھا، اس سیریز کے بعد مصباح اور یونس کی ریٹائرمنٹ سے بہت زیادہ چیلنجز کا سامنا کرنا پڑا۔