Recently Finished
Live Cricket
Upcoming Matches
View All Matches

نوے کی دہائی کے فکسنگ اسکینڈلز ایک مرتبہ پھر سامنے آنے پر جاوید میانداد نے وزیر اعظم عمران خان سے بڑا مطالبہ کر دیا۔ اپنے ایک انٹرویو میں جاوید میانداد نے کہا کہ وزیر اعظم قانون بنوائیں اور فکسنگ میں ملوث کھلاڑیوں کو پھانسی دلوائیں۔
انہوں نے مطالبہ کیا کہ کھلاڑیوں کے ساتھ بکیز کو بھی پھانسی دی جائے، جب تک بکیز کو سزا نہیں ہو گی کھلاڑی ایسے ہی اسپاٹ فکسنگ اور میچ فکسنگ کرتے رہیں گے، ایسا قانون بنائیں کہ کسی کرکٹر میں ہمت نہ ہو کہ وہ فکسنگ کر سکے۔
جاوید میانداد نے کہا کہ سلیم ملک، عطا الرحمان اور دیگر کھلاڑیوں نے چند رقم کیلئے ملک بیچا، فکسنگ میں ملوث کھلاڑیوں نے ملک کے ساتھ اپنے خاندان اور فینز کے جذبات کو ٹھیس پہنچائی۔
ان کا کہنا تھا کہ عطا الرحمان آج رو رو کر بتا رہا ہے کہ مجھے پھنسایا گیا، عطا الرحمان کو اس وقت اکسایا گیا اب اسے پچھتاوا ہے، میں نے بھی 1999 میں کوچنگ اس لیے چھوڑی کیونکہ مجھے اندازہ ہو گیا تھا کہ فکسنگ ہو رہی ہے۔
جاوید میانداد نے مزید کہا کہ جسٹس قیوم کمیشن کو فکسنگ سے متعلق سب کچھ بتایا لیکن کھلاڑی بچ نکلے، جسٹس قیوم کمیشن نے جن کرکٹرز کو پی سی بی سے دور رکھنے کا کہا وہ آج بھی کرکٹ بورڈ سے جڑے ہوئے ہیں۔